16 February, 2016 11:56

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

15-FEBRUARY-2016

انیس سو اٹھاون میں ایوب خان نے مارشل لا۶ لگایا اور بعد میں انہوں نے غیر آئینی طور حکومت یحیی خان کے حوالے کر دی جس سے پاکستان ٹوٹا۔ محمد زبیر کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

انیس سو سینتالیس سے ہماری پالیسیوں اور بہت سے سیاست دانوں نے بھی پاکستان توڑنے میں اپنا حصہ ڈالا۔ محمد زبیر

پاکستان کو توڑنے کی سو فیصد زمہ داری فوج کو قبول کرنی چاہئیے۔ محمد زبیر

ملک ٹوٹنے میں ملٹری کے علاوہ مشرقی پاکستان کی دوری اور کرپشن بھی بہت بڑے عوامل تھے۔ عارف علوی

ملک ٹوٹنے میں فوج بھٹو صاحب اور بھارت تینوں کا بہت بڑا کردار ہے۔ عارف علوی

ملک ٹوٹنے کے سب سے بڑے زمہ دار فوجی تھے کیونکہ اس وقت ان کی حکومت تھی۔ خالد مقبول صدیقی

بہت ساری قومیں جو تباہ ہوئیں ان میں بہت سارے عوامل کے علاوہ ایک مشترکہ چیز انصاف کا نہ ہونا ہے۔ خالد مقبول صدیقی

جن کو پاکستان پر حکمرانی کرنی تھی ان کے لئیے دو چیزیں بہت بڑا خطرہ تھیں ایک بنگالیوں کی اکثریت دوسرے اردو بولنے والوں کی کوالٹی۔ خالد مقبول صدیقی

بھٹو صاحب کے زریعے بنگالیوں اور اردو بولنے والے دونوں پر سیاسی مہر لگوا دی گئی۔خالد مقبول صدیقی

میرے والد محمد عمر کو مشرقی پاکستان میں الیکشن کروانے کی زمہ داری دی گئی تھی اور سب جانتے ہیں کہ وہ الیکشن پاکستان کی تایخ کا سب سے شفاف الیکشن تھا۔ محمد زبیر

بعد میں میرے والد کشمیر میں فوج کے ایک ڈویزن کو لیڈ کر رہے تھے بھٹو صاحب نے انہیں وہاں سے بلوا کر یونیفارم میں ریٹائر کر دیا تھا۔ محمد زبیر

بنگالیوں میں بیچینی تھی جس کا بھارت نے فائدہ اٹھایا لیکن فوج نے اسے بگڑنے دیا۔ عارف علوی

آصف زرداری کے اینٹ سے اینٹ بجا دینے کے بیان کے بعد پیپلز پارٹی کی سی ای سی کی میٹنگ ہوئی انہوں نے کہا کہ ان کے بیان کو سیاق و سباق کے بغیر دیکھا گیا ہے۔لطیف کھوسہ

بھٹو صاحب کو ملک ٹوٹنے کا زمہ دار ٹھہرایا جا رہا ہے نہ انہوں نے نورالامین کو وزیراعظم بنایا تھا ور نہ انہوں نے مجیب الرحمان کو قید کیا تھا۔لطیف کھوسہ

ملک ٹوٹنے کا میں ادارے کو زمہ دار نہیں ٹھہراوں گا بلکہ یحیی خان اور ان کے ساتھیوں کو اس کو تسلیم بھی کرنا چاہئیے اور قوم سے معافی بھی مانگنی چاہئیے۔ لطیف کھوسہ

الطاف حسین بڑے سیاسی لیڈر ہیں ان کی تقریر پر پابندی نہیں ہونی چاہئیے۔ محمد زبیر

الطاف حسین کی تقریر پر پابندی لگنے سے ایم کیو ایم کا گراف پہلے سے بہت اوپر چلا گیا ہے۔محمد زبیر

انیس سو اکہتر اور دوسرے واقعات پر کوئی بھی اپنی رائے دے سکتا ہے۔ محمد زبیر

حمودالرحمان کمشن رپورٹ پاکستان میں جاری نہیں ہوئی لیکن بھارت نے اس کو جاری کر دیا۔ عارف علوی

کارگل کا واقع ہو گیا لیکن وزیراعظم نواز شریف کی معصومیت دیکھیں کہ وہ کہتے ہیں کہ انہیں معلوم ہی نہیں تھا۔ عارف علوی

اداروں پر تنقید کی جا سکتی ہے لیکن اس میں احتیاط سے کام لیا جانا چاہئیے۔ عارف علوی

اگر ہم بھٹو کو جس طرح انہوں نے بھارت سے شملہ مزاکرات کئیے اور پاکستان کے ترانوے ہزار قیدیوں کو چھڑوایا کا کریڈٹ نہں دیں گے تو زیادتی کریں گے۔ لطیف کھوسہ

نواز شریف نے امریکہ کے سامنے ہتھیار پھینک دئیے اور پاکستانی فوجیوں کی کارگل سے واپسی پر سلامتی کی کوئی گارنٹی نہیں لی۔ لطیف کھوسہ

پرویز مشرف کہتے ہیں کہ انہوں نے نوز شریف کو کارگل کے واقع کا پہلے سے بتا دیا تھا۔ لطیف کھوسہ

پرویز مشرف کہتے ہیں کہ ان کی کارگل کی ایشو پر نواز شریف سے دو ملاقاتیں ہوئیں تھیں۔عارف علوی

مشرف کہتے ہیں کہ کارگل پر ایک میٹنگ میں انہوں نے نواز شریف کو سینڈ وچ پیش کئیے تو انہوں نے کہا کہ کک بہت اچھا ہے اسے وزیراعظم ہاؤس بھیج دیں۔عارف علوی

جنرل شاہد عزیز نے اپنی کتاب میں کارگل واقع میں نواز شریف کو بری الزمہ قرار دیا ہے۔ محمد زبیر

جنرل شاہد عزیز نے کہا ہے کہ کارگل کے واقع کا چار جرنیلوں کے علاوہ کسی کو علم نہیں تھا۔ محمد زبیر

جنرل مشرف نے نواز شریف سے التجا کی تھی کہ ہم کارگل میں بری طرح پھنس گئے ہیں امریکہ کو کہہ کر جنگ بندی کروا دیں۔ محمد زبیر

عمران خان نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ مشرقی پاکستان میں ہماری فوج نے اپنے ہی لوگوں کو بچر کیا تھا۔ محمد زبیر

انیس سو اکہتر میں مشرقی پاکستان میں ہماری فوج نے انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کی تھیں لیکن اتنی نہیں جتنی عمران خان کہتے ہیں۔ محمد زبیر

مشرقی پاکستان میں پاکستان اور بھارت دونوں کی افواج نے انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کی تھیں۔ عارف علوی

میں نہیں سمجھتا کہ ہماری فوج نے مشرقی پاکستان میں اپنے ہی لوگوں کو مارا بھارت نے بہت زیادہ غلط خبریں پھیلا دی تھیں۔ لطیف کھوسہ

باقی لوگوں نے فوج کے خلاف بڑی بڑی باتیں کی ہوئی ہیں ایم کیو ایم چھوٹی سی بات بھی کر دے تو پابندی لگا دی جاتی ہے۔ خالد مقبول صدیقی

ایک آدمی مارا گیا ہو یا زیادہ اپنے لوگوں کو مارنا انہیں بچر کرنا ہی ہوتا ہے۔ عارف علوی

کبھی بنگالیوں کو تو کبھی پٹھانوں کو تو کبھی بلوچوں اور مہاجروں کا غدار کہا گیا اس پر ایک کمشن بننا چاہئیے۔ خالد مقبول صدیقی