21 January, 2016 08:53

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

20-JANUARY-2016

ہم ہمیشہ سے دہشت گردی کے مسئلے کا انکار کرتے رہے ہیں ہم دہشت گردوں کو دوست اور ہم وطن کہتے رہے ہیں۔ خالد مقبول صدیقی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

بیرونی دشمن سے پہلے گھر کے اندر موجود دہشت گردوں کو کچلنا ضروری ہے۔ خالد مقبول صدیقی

ہم نے سینٹ میں دہشت گردی کے مسئلے پر ایک سال پہلے بات کی تھی لیکن بیشتر مسائل آج بھی کما حقہو موجود ہیں۔ سراج الحق

ہم دہشت گردوں کے خلاف بات کر سکتے ہیں لیکن جو کام حکومت کر سکتی ہے وہ ہم نہیں کر سکتے۔ سراج الحق

ایک شخص سمجھتا ہے کہ وہ جیکٹ پھاڑے گا اور سیدھا جنت میں جائے گا اس سوچ کو بدلنے کی ضرورت ہے۔ عارف علوی

دہشت گردی کا مسئلہ بڑھ گیا ہے اور بڑھا اس لئیے ہے کہ ہم نے قوم کو اعتماد میں نہیں لیا۔ میر ظفر اللہ جمالی

انیس سو پینسٹھ کی جنگ میں ہم نے قوم کو اعتماد میں لے کر کامیابی حاصل کی تھی۔ میر ظفر اللہ جمالی

لوگوں کے معیار زندگی میں بہت فرق ہے اسلام آباد، لاہور اور کوئٹہ کے معیار زندگی میں بہت زیادہ فرق ہے۔ میر ظفر اللہ جمالی

ہم بے نام اور بے چہرہ دشمن کے خلاف لڑ رہے ہیں لیکن مولانا عبدالعزیز کے خلاف کوئی کاروائی نہیں کر رہے ہیں۔ خالد مقبول صدیقی

مولانا عبدالعزیز کے مدرسے کی بچیاں داعیش کے لئیے حلف دے رہی ہیں اور کوئی انہیں پوچھ نہیں رہا۔ خالد مقبول صدیقی

دہشت گردوں کے ہمدرد اے پی سی کی وجہ سے اب خاموش ہیں لیکن اندر سے اب بھی ان کے ساتھ جڑے ہوئے ہیں۔ خالد مقبول صدیقی

سب سے پہلے زہن بدلنے کے لئیے کام کرنا ہو گا ہتھیار اور دہشت گردی کے لئیے منصوبہ بندی اور پھر اس پر عمل بعد میں آتے ہیں۔ عارف علوی