12 January, 2016 09:11

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

11-JANUARY-2016

بھارت کی طرف سے پٹھان کوٹ بیس پر حملے کے متعلق دی گئی معلومات پر پاکستانی ادارے کام کر رہے ہیں۔ طلال چوہدری کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

پاکستان ایک زمہ دار ملک ہے اور اپنی سر زمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہونے دے گا۔ طلال چوہدری

دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے تمام ادارے حکومت کے ساتھ ہیں۔ طلال چوہدری

پاکستان نے اگر دہشت گردی کی مصیبت سے نکلنا ہے تو اسے دہشت گردوں کے خلاف ہمیں ایمانداری سے کام کرنا چاہئیے۔سعید غنی

وزیراعظم نے پٹھان کوٹ حملے کے متعلق دو میٹنگز کی ہے بھارت نے جو معلومات دی ہیں وہ ناکافی ہیں لیکن ہم نے دہشت گردی کے خلاف کام کرنا ہے۔ غلام سرور

پاکستان میں جو دہشت گردی ہوتی ہے اس میں بھی کسی نہ کسی طرح بھارت ملوث ہوتا ہے ہمیں اس مسئلے کو بھی اٹھانا چاہئیے۔ گلام سرور

کراچی آپریشن متعصبانہ ہے اور صرف ہمارے خلاف ہی ہو رہا ہے۔ انبساط ملک

ہر محب وطن یہ چاہے گا کہ کرپشن پر کام کیا جائے کرپشن بھی ایک طرح کی دہشت گردی ہی ہے۔ انبساط ملک

پیپلز پارٹی ہمیشہ روٹھی ہی رہتی ہے جب سے کرپشن پر ہاتھ ڈالا گیا ہے یہ روٹھے ہوئے ہیں۔انبساط ملک

ایم کیو ایم یا کسی بھی ادارے کے خلاف اگر پیپلز پارٹی کے کسی فرد کے خلاف کرپشن کا کوئی ثبوت ہے تو سامنے لائے۔ سعید غنی

رینجرز نے سندھ بلڈنگ اتھارٹی پر چھاپہ مارا اگر وزیراعلی یہ کہیں کہ یہ ان کا اختیار نہیں ہے تو یہ غلط بات نہیں ہے۔ سعید غنی

رینجرز کہتے ہیں کہ دو اسی ارب روپے کی کرپشن ہوئی اسے ثابت بھی تو کیا جائے۔ سعید غنی

سیاسی جماعتوں کو بھی زمہ داری کا مْطاہرہ کرنا چاہئیے کرپٹ لوگوں کو علحیدہ کریں اور نئی قیادت کو سامنے لایں۔ طلال چوہدری

مسلم لیگ ن نے کرپٹ لوگوں کی لسٹ میں اپنے لوگوں کے صرف نام آنے پر بہت شور کیا ابھی کسی کے خلاف کاروائی نہیں ہوئی۔ سعید غنی

کیا آپریشن ضرن عضب صرف کراچی اور فاٹآ کے لئیے ہے باقی ملک میں کچھ نہیں ہو رہا۔غلام سرور

کیا پاک صاف لوگ صرف پنجاب میں ہیں وہاں کوئی کرپشن نہیں ہے۔غلام سرور

پنجاب میں سو کے قریب مدارس ایسے ہیں کہ جن کو اب بھی غیر ملکوں سے پیسے مل رہے ہیں۔غلام سرور

اچھا معاشرہ اس وقت بنتا ہے جب معاشرتی برائیاں ختم کی جایں کرپشن بہت بڑی خرابی ہے۔ا نبساط ملک

سندھ میں کرپشن کی بہت بڑی بڑی کہانیاں ہیں۔ انبساط ملک

ہمارا ڈی ایچ اے بحریہ ٹاؤن یا ویلی ڈی ایچ اے کے ساتھ دور دور کا بھی تعلق نہیں ہے۔ بریگیڈئیر امجد کیانی

میں تو ملٹری میں تھا لیکن کامران کیانی نے ننانوے میں فوج چھوڑ کر اپنا کنسٹرکشن کا کاروبار شروع کر دیا تھا۔ امجد کیانی

کامران کیانی نے جب اپنا کنسٹرکشن کا کاروبار شروع کیا تو پرویز کیانی اس وقت میجر جنرل تھے اور سب کو پتہ ہے کہ ایک میجر جنرل کا کتنا اثر رسوخ ہوتا ہے۔امجد کیانی

کامران کیانی کو خوش قسمتی سے چھ سو ملین کا ایک ٹھیکہ ملا مجھے نہیں معلوم کہ وہ اسے کیسے ملا تھا۔ امجد کیانی

نیب نے کامران کیانی پر مقدمہ بنایا ہے انہیں تحقیقات کرنے دیں کوئی نتیجہ اخز نہ کریں۔ امجد کیانی

ہم تمام بھائی فوج میں رہے ہیں ہم کوئی گری ہوئی حرکت کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتے۔ امجد کیانی

راض ملک کا گھر میرے گھر سے صرف دو سو گز کے فاصلے پر ہے لیکن میں زندگی میں اس سے کبھی نہیں ملا صرف ایک دفعہ ٹی وی پر دیکھا تھا۔ امجد کیانی

مسلم لیگ ن کے لوگ کوئی غلط کام ہی نہیں کر رہے تو ان کو پکڑا کیوں جائے گا۔ طلال چوہدری

حکومت بڑے بڑے منصوبے لگا رہی لیکن پنجاب پر الزامات لگائے جا رہے ہیں تا کہ کچھ نظر نہ آئے۔ طلال چوہدری

مسلم لیگ ن کی حکومت دنیا کی سب سے مہنگی بجلی پیدا کر رہی ہے میٹرو بس چلا رہی ہے سستی روٹی اور لیپ ٹاپ سکیم کے سکینڈل بھی موجود ہیں۔ سعید غنی

وزیراعظم نے سی پیک کے تحت بلوچستان میں دو سڑکیں بنانے کا ٹھیکہ دوسرے نمبر کی بولی والے کو دے کر ملک کو چھ سو پچاس ملین کا نقصان پہنچایا ہے۔غلام سرور

پاکستان میں تمام بڑے بڑے منصوبے ترکی کی فرم البراکہ لگا رہی ہے جو کہ ایک کرپٹ فرم ہے۔غلام سرور

میٹرو بس پر غریب آدمی بیس روہپے میں سفر کرتا ہے۔ طلال چوہدری

ایم کیو ایم نے بلدیاتی انتخابات میں فقید المثال کامیابی حاصل کی ہے لیکن حکومت ابھی تک مخصوص نشستوں کے انتخابات کا شیڈیول نہیں دے رہی۔ انبساط ملک

انتخابات کا شیڈیول پیپلز پارٹی نے نہیں بلکہ الیکشن کمشن نے دینا ہے۔ سعید غنی

پیپلز پارٹی نے اگر ایم کیو ایم کا شیڈیول چرانا ہوتا تو بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں چراتی ہر جگہ تو ایم کیو ایم جیتی ہے۔ سید غنی

جو لوگ ہمارے گروپ میں شامل ہونے کی کوشش کر رہے ہیں انہیں ڈرایا دھمکایا جا رہا ہے۔ انبساط ملک

نیشنل ایکشن پلان کے تحت پنجاب میں بھی ضرور آپریشن شروع کیا جانا چاہئیے۔غلام سرور

چوہدری نثار کے اپنے حلقے میں سو بندوں کا قاتل موجود ہے انہیں اس کا جواب دینا چاہئیے۔ غلام سرور