17 December, 2015 09:14

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

16-DECEMBER-2015

نئی قرارداد میں میرے خیال میں رینجرز کے اختیارات میں کوئی کمی نہیں کی گئی ہے۔ سعید غنی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

اوپا کے تحت اور دہشت گردی کے خلاف رینجرز کا ملنے والے اختیارات قائم ہیں۔ سعید غنی

وزیراعلی سندھ نے ڈی جی رینجرز کا خط بھی لکھا تھا کہ کہاں کہاں آپ حد سے تجاوز کر رہے ہیں۔ سعید غنی

رینجرز کا اختیارات سے تجاوز کرنا نہ ان کے لئیے اچھا ہے اور نہ ہمارے لئیے۔ سعید غنی

ہمارے سندھ حکومت کی نئی قرارداد پر تحفظات ہیں ہماری خواہش تھی کہ رینجرز کو انہی اختیارات کے تحت آپریشن جاری رکھنے دیا جائے۔ طارق فضل چوہدری

رینجرز کے اختیارات کو پک اینڈ چوز کرنے سے جو نتائج دہشت گردی کے خلاف حاصل ہو رہے تھے وہ نہیں ہو سکیں گے۔ طارق فضل چوہدری

رییجرز آپریشن پر کچھ تحفظات ایم کیو ایم کی طرف سے آئے اور کچھ پیپلز پارـٹی کی طرف سے لیکن مجموعی طور پر یہ کامیاب آپریشن ہے۔ اسد عمر

آپریشن کرنے سے پہلے اجازت والی بات اس کو کمپرومائز کرنے والی بات ہے۔ اسد عمر

پیپلز پارٹی کو ڈر لگ رہا ہے کہ کہیں کراچی آپریشن کرپشن کی طرف نہ چلا جائے۔ اسد عمر

دہشت گردی اور اس کے لئیے سرمایہ فراہم کرنا ایک دوسرے کے ساتھ جڑے ہوئے ہیں یہ دنیا کا مسملہ اصول ہے۔ اسد عمر

قرارداد میں یہ کہنا کہ رینجرز دہشت گردی کے خلاف کاروائی نہیں کریں گے صرف فرقہ واریت کے خلاف کریں گے میری سمجھ سے باہر ہے۔ اسد عمر

سندھ اسمبلی کی قرارداد گڈ اور بیڈ طالبان والی بات ہو گئی ہے۔ اسد عمر

رینجرز کے اختیارات میں سے کرپشن کو نکال دینا بہت خطرناک بات ہے۔ اسد عمر

میرا قیاس ہے کہ رینجرز کے اختیارات میں سے کرپشن کی شق ان سے بارگین کرنے کے لئیے نکالی گئی ہے۔ اسد عمر

پیپلز پارٹی سمجھتی ہے کہ رینجرز کا آپریشن جاری رہنا چاہئیے اور اسے اپنے منطقی انجام تک پہنچنا چاہئیے۔ سعید غنی

دہشت گردی کے خلاف ابتدا میں جو کمٹمنٹ دکھائی دیتی تھی وہ اب نہیں ہے۔ سعید غنی

دہشت گردی کے خلاف اس وقت کمٹمنٹ شاید خوف کی وجہ سے باقی نہیں رہی۔ سعید غنی

فون سمز عام بکتی تھیں لیکن اب وہ تمام رجسٹرڈ ہیں۔ طارق فضل چوہدری

اسلام آباد میں تمام مدارس کی رجسٹریشن ہو چکی ہے۔ طارق فضل چوہدری

اسلام آباد میں گرین بیلٹس پر مدارس بنے ہوئے ہیں کسی کے خلاف کچھ نہیں کیا گیا۔ اسد عمر

فاٹا ریفارمز میں تو کوئی رکاوٹ نہیں ہے حکومت وہ کیوں نہیں کر رہی۔ اسد عمر

تمام لوگ سیاسی وابستگیوں سے ہٹ کر دیکھیں کہ اے پی سی جیسے واقعات کی بنیادی وجوہات ختم ہو گئیں یا ابھی باقی ہیں۔ اسد عمر

اے پی سی کے واقع میں لوگوں کے بچے چلے گئے لیکن آنے والی نسلوں کو تو محفوظ کر لیں۔ سعید غنی

آج سکولوں میں عام چھٹی کی وجہ اے پی سی کا واقع نہیں بلکہ دہشت گردوں کی دھمکی تھی۔ سعید غنی

بد قسمتی سے لگتا ہے کہ ہم آئیندہ سولہ دسمبر کو بھی آج جیسی ہی گفتگو کر رہے ہوں گے۔ اسد عمر

کالعدم تنظیموں نے بلدیاتی الیکشن لڑا ہے الیکشن کمشن کہاں تھا۔ اسد عمر

سویلین ادارے نہایت کمزور ہیں رینجرز چلے گئے تو دہشت گردوں کے خلاف کون لڑے گا۔ اسد عمر

عمران خان صاحب دھاندلی اور حکومت میٹرو کے چکر سے نکلے اور قوم کو دہشت گردی کے مسئلے پر اکٹھا کریں۔ سعید غنی

وزیراعظم تعلیمی ریفارمز لا رہے ہیں جس کو سارا ملک فالو کرے گا۔ طارق فضل چوہدری

نواز شریف تیس سالوں سے حکومت میں ہیں تعلیم ان کی ترجیح نہیں ہے ہم آج بھی تیس سال پہلے کہ جگہ پر کھڑے ہیں۔ اسد عمر

وزیراعظم کو ترجیحی بنیادوں پر دہشت گردی کو ختم کرنا ہو گا۔ سعید غنی