1 October, 2015 07:35

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

30-SEPTEMBER-2015

رضا ربانی صاحب اور پرویز رشید میرے لئیے محترم ہیں لیکن اگر وہ نیب کے بارے میں بازار میں بیٹھ کر باتیں کریں گے تو پھر کوئی اثر نہیں ہو گا۔ روحیل اصغر کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

پارلیمنٹ موجود ہے اگر نیب کا ادارہ کوئی غلط کام کرتا ہے تو ایسا قانون بنا دیں کہ نیب کا بھی احتساب ہو سکے۔ روحیل اصغر

ہمارے ہاں الزامات بہت لگتے ہیں لیکن میں نے آج تک الزامات کو ثابت ہوتے نہیں دیکھا۔ روحیل اصغر

ہماری اشرافیہ اتنی لوٹ مار کرنے والی ہے کہ شاید ہی کسی اور ملک میں ہو اور اس میں سب شامل ہیں۔ شفقت محمود

اس میں بھی کوئی دو رائے نہیں ہیں کہ نیب لوگوں پر جرائم ثابت نہیں کر سکی اور عدلیہ سزایں نہیں دے سکی۔ شفقت محمود

ہم یہ کہتے رہیں کہ ہمارا دامن تو آلودہ ہے لیکن جب تک دوسروں کو ہاتھ نہ لگایا جائے ہمیں بھی ہاتھ نہ لگایا جائے یہ بات درست نہیں ہے۔ شفقت محمود

سیاست دانوں پر اضافی بوجھ ہے کونکہ وہ عوام کے ووٹوں سے منتخب ہو کر آتے ہیں۔ شفقت محمود

ہمارے حکمران پارلیمنٹ اور ادارے نہیں چاہتے کہ احتساب ہو۔ شفقت محمود

کرپشن بے انتہا ہے اور اس میں کوئی کمی آنے کا امکان نظر نہیں آ رہا۔ جنرل ریٹائرڈ حامد خان

ہر کوئی چاہتا ہے کہ دوسرے کا احتساب کرو لیکن میرا نہیں کرو۔ حامد خان

کے پی کے میں ہم نے کہا ہے کہ بیٹھا ہوا وزیر بھی کرپشن میں پکڑا جائے گا تو احتساب کریں گے تا کہ یہ عمل مکمل ہو۔ حامد خان

جو بھی کرپشن میں پکڑا جاتا ہے جب جیوڈیشل ریمانڈ پر جاتا ہے تو وہ دل پکڑ کر ہسپتال پہنچ جاتا ہے۔ حامد خان

ڈاکٹر عاصم جیسے ہی ہسپتال سے آیں گے ان کے خلاف اتنے ثبوت ہیں کہ انشا اللہ واپس جیل جایں گے۔حامد خان

ہم سوچ رہے ہیں کہ آئندہ ڈاکٹر کی بھی تحقیقات کی جایں کہ کہیں اس نے پیسے ے تو بیماری کا سرٹیفیکیٹ نہیں بنا دیا۔ حامد خان

میرے خیال میں ڈاکٹر کے خلاف تحقیقات کرنے کی بجائے اپنے سسٹم کو ٹھیک کیا جانا چاہئیے۔ روحیل اصغر

احتساب کمشن تو بن گیا لیکن جب تک باقی نظام ٹھیک نہیں کیا جائے گا کچھ نہیں ہو گا۔ شفقت محمود

نندی پور، ایل این جی کے علاوہ اور بھی بہت سے میگا کرہپشن سکینڈلز ہیں جن کی تحقیقات ہونی چاہئییں۔ شفقت محمود

اصغر خان کیس کو پچیس چھبیس سال ہو گئے ہیں لیکن پھر بھی آگے نہیں بڑھ رہا۔ شفقت محمود

احتساب کمشن کا قانون ہے کہ وہ تین مہینے لے گا تین مہینے تحقیقات کرنے کے لئیے اور تین مہینے ہی میں عدالت کیس کا فیصلہ کرے گی۔ حامد خان

اٹھرویں ترمیم کے بعد صوبے اپنے کرپشن کے مقدمات کو بہتر انداز میں حل کر سکتے ہیں۔ حامد خان

سندھ نیب کے سربراہ نے سندھ ہائی کورٹ چیف جسٹس کو ملنا طے کیا ہے کیونکہ نوے لوگ جن پر کرپشن کے مقدمات بنے انہوں نے اپنی ضمانتیں کروا لی ہیں۔ سلمان بلوچ

نیب سندھ کے سربراہ چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ سے ملاقات میں کہیں گے کہ جن لوگوں پر کرپشن کے مقدمات بنیں ان کی ضمانت نہ لی جائے۔ سلمان بلوچ

کرپٹ لوگوں کو پکڑنے کا کام وہ کر رہے ہیں کہ جن کا یہ کام نہیں ہے میر اشارہ فوج کی طرف ہے۔ سلمان بلوچ

ایم کیو ایم کرپشن کے خلاف فوج کے آپریشن کی حمایت کرتی ہے۔ سلمان بلوچ

کے پی کے میں دو وزیروں پر کرپشن کا الزام لگا کر نکالا گیا لیکن کل پھر انہی سے وزیراعلی کی موجودگی میں معاہدہ کیا گیا ہے۔ روحیل اصغر

کے پی کے میں جن دو لوگوں پر کرپشن کا الزام تھا ان کا کیس میرے پاس نہیں آیا اگر آیا تو میں مایوس نہیں کروں گا۔ حامد خان

جن دو لوگوں پر کرپشن کا الزام تھا وہ اب بھی موجود ہے ختم نہیں ہوا اور ان کو حکومت میں بھی شامل نہیں کیا گیا۔ شفات محمود