23 September, 2015 09:25

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

22-SEPTEMBER-2015

میرا بیٹا اللہ کا شیر تھا وہ اللہ کی خاطر ان خارجی کتوں کے ساتھ لڑا جو نمازیوں پر بھی پل پڑتے ہیں اور دین کو بھی بدنام کرتے ہیں۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

اللہ تعالی میرے بیٹے کی شہادت کو قبول کر لے۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار

جن دوسری ماؤں کے بیٹے دہشت گردوں کے خلاف لڑ رہے ہیں میں ان سے یہی کہوں گی کہ دل بڑا رکھیں۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار

جو کچھ دہشت گردوں نے کیا ہمارا دین ایسا کچھ نہیں سکھاتا نہتے نمازیوں کو مارنا کونسا اسلام ہے۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار

میرے بیٹے کی ڈیوٹی نہیں تھی وہ وہاں رضاکارانہ طور پر گیا۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار

میرے بیٹے کو بریگیڈئیر صاحب نے کہا کہ رک جاؤ پیچھے سے مدد آ لینے دو لیکن اس نے کہا کہ نہیں اتنی دیر میں بہت نقصان ہو جائےگا بہت سی جانیں چلی جایں گی۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار

میرے بیٹے نے کہا کہ وہ جائےگا اس نے ایک سپاہی کی گن اور جیکٹ لی اور سب سے آگے چلا گیا۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار

جب سے اے پی ایس کا واقع ہوا تھا وہ بے چین تھا اس کا دل کرتا تھا کہ وہ زمہ داروں کو ایک ایک کر کے خود مار کر آئے۔ والدہ شہید کیپٹن اسفند یار

میں کیپٹن اسفند یار کی گھر گیا تھا ان کے والد اور بھائیوں کو جو جزبہ تھا میں اسے سلام پیش کرتا ہوں۔ میاں عتیق

کیپٹن اسفند یار کو سلا پیش کرتا ہوں اور دعا کرتا ہوں جنت تو ان کے لئیے گارنٹی ہے اللہ انہیں وہاں بہت اعلی مقام عطا فرمائے۔ نصرت ندیم

کیپٹن اسفند یار کی قربانی کو پورا پاکستان اور آنےوالی نسلیں یاد رکھیں گی۔ عابد شیر علی

کیپٹن اسفند یار نے دہشت گردوں کو یہ پیغام دیا ہے کہ وہ پاکستان کی حفاظت کرنا بھی جانتا ہے اور اس کے لئیے اپنی جان دینا بھی جانتا ہے۔ عابد شیر علی

دہشت گردوں اور پاکستان دشمنوں کو ہر نوجوان کیپٹن اسفند یار کی طرح کا ہی ملے گا جو پاکستان کے وقار پر اپنی جان دے دے گا۔ عابد شیر علی

یہ بہت ہی افسوس کی بات ہے کہ نانٹیز کے گڑھے مردے پھر سے اکھاڑے جا رہے ہیں۔ نصرت ندیم

پاکستان کی بد قسمتی رہی ہے کہ کچھ لوگوں نے بہت غیر زمہدارانہ رویہ اپنایا ہے اکہتر میں بھی یہی ہوا تھا۔ نصرت ندیم

میں خود پر لگائے گئے الزامات کی تردید کرتا ہوں نہ ماضی میں ایسے الزمات درست نکلے اور نہ اب نکلیں گے۔ نصرت ندیم

ہم چاہتے ہیں کہ بلوچستان کی طرح ایم کیو ایم کے ساتھ بھی ماضی کو بھلا کر ایک نئی شروعات کی جایں۔ ندیم نصرت

دو ہزار ایک میں آئی ایس آئی کے ہیڈ ہمارے پاس آئے تھے اور ایک نیا آغاز کیا گیا تھا۔ ندیم نصرت

ہم نے اپنی طرف سے آغاز کر دیا ہےاب اسٹیبلشمنٹ کو بھی چاہئیے کہ آگے بڑھے۔ ندیم نصرت

ہم ان لوگوں کی اولاد ہیں کہ جنہوں نے پاکستان بنانے کی خاطر اپنا سب کچھ قربان کر دیا تھا۔ ندیم نصرت

کراچی میں پچھلے پچیس سالوں سے بھتہ خوری ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی چل رہی ہے۔ میاں محمود الرشید

کراچی کو بھتہ خوری ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی سے پاک کرنے کے لئیے حکومت ملٹری اور تمام سیاسی جماعتوں کا اتفاق رائے ہے۔عابد شیر علی

جن لوگوں نے کراچی آپریشن شروع کرنے کو کہا تھا ان میں ایم کیو ایم بھی شامل ہے۔ میاں عتیق

ایم کیو ایم کے کارکنوں کو منہ پر کپڑا ڈال کر اور ہتھکڑی لگا کر عدالت میں پیش کیا جاتا ہے یہ امتیازی سلوک ہے، میاں عتیق

ان لوگوں کا کیا قصور تھا جنہیں بھتے کی پرچی ملتی تھی یا ٹارگٹ کلنگ میں مار دیا جاتا تھا۔ عابد شیر علی

جن لوگوں کو فیکٹری میں بند کر کے مار دیا گیا ان کا کیا قصور تھا۔ عابد شیر علی

سپریم کورٹ کے فیصلے کو بنیاد بنا کر سیاسی جماعتوں کے عسکری ونگز ختم کر دینے چاہئییں۔ محمود الشید

ننانوے فیصد بھتہ خور اور ٹارگٹ کلرز نائن زیرو سے پکڑے جاتے ہیں۔ محمود الرشید

تمام سیاسی جماعتوں کے خلاف بلا امتیاز آپریشن ہونا چاہئیے۔ محمود الرشید

کراچی آپریشن کے شروع ہونے کے بعد لوگوں نے سکھ کا سانس لیا ہے اور بزنس مین اب کاروبار پر توجہ دے رہا ہے۔ محمود الرشید

آنے والی نسلوں کے لئیے بہتر ہو گا اگر ہم ٹارگٹ کلرز اور جرائم پیشہ لوگوں کو ختم کر دیں۔ عابد شیر علی

بلوچستان کا مسئلہ مختلف ہے اور ایم کیو ایم کے معاملات اور طرح کے ہیں۔ عابد شیر علی

الطاف حسین کے بیانات پر پابندی لگا دی جاتی ہے باقی لوگوں کے بیانات پر کچھ نہیں کیا جاتا۔ میاں عتیق

ایم کیو ایم کی لیڈر شپ کی طرف سے را، فوج اور پاکستان کے متعلق متنازع بیانات دئیے جاتے ہیں۔ محمود الرشید

ایم کیو ایم مڈل کلاس لوگوں کی جماعت ہے یہ سب ٹارگٹ کلرز نہیں ہیں نیا آغاز کرنا چاہتے ہیں تو موقع دیا جانا چاہئیے۔ محمود الرشید

رانا ثنا اللہ کو بھی دہشت گرد کہا گیا ہے مسلم لیگ ن سب سے پہلے اپنے گھر سے شروع کرے۔ میاں عتیق