30 July, 2015 22:34

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

30-JULY-201

پی ٹی آئی کو اسمبلی سے نکالنے کے مسلئے پر کوئی اپنے زاتی جزبات کا اظہار تو کر سکتا ہے لیکن پالیسی بیان میاں نواز شریف ہی دیں گے۔ شیخ روحیل اصغر کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

اس وقت ملک میں اور بہت سے مسائل ہیں ہمیں آگے بڑھنا چاہئیے۔ روحیل اصغر

میری جنرل پاشا سے پہلی ملاقات دو ہزار گیارہ میں ہوئی کھانے پر دو گھنٹے ملاقات چلی اور اس کا ٹاپک کراچی تھا۔ اسد عمر

جنرل پاشا نے دو گھنٹے کی ملاقات میں صرف ایک منٹ کے لئیے پی ٹی آئی کا زکر کیا اور اسے ایک پارٹی کی حیثیت سے مسترد کر دیا۔ اسد عمر

میرے لئیے یہ انتہائی حیرت کی بات ہو گی کہ جنرل پاشا نے زبیر بھائی کو پی ٹی آئی میں شامل ہونے کی دعوت دی ہو۔ اسد عمر

مجھے معلوم نہیں کہ جنرل پاشا کی زبیر سے کیا بات ہوئی لیکن میں نے جنرل پاشا کو مشورہ دیا تھا کہ ایک چینل ہونا چاہئیے کہ جہاں سے آپ کو کراچی کے حالات کی حقیقت کا علم ہو سکے۔ اطہر عباس

جنرل پاشا سے ملنے والے لوگوں میں اسد عمر، جمیل یوسف اور ظفر عباس تھے اور یہ میٹنگ صرف کراچی کی صورت حال پر ہوئی تھی۔ اطہر عباس

محمد زبیر سے میں نے جنرل پاشا کی میٹنگ ارینج نہیں کی تھی اور نہ کبھی انہوں نے ان کے ساتھ ملنے کا زکر کیا تھا۔ اطہر عباس

اگر حکومت سمجھتی ہے کہ جنرل پاشا اور جنرل ظہیر پی ٹی آئی کے دھرنے میں ملوث تھے تو ضرور اس کی تحقیقات کر لے۔ اطہر عباس

ڈی جی آئی ایس آئی آرمی چیف کی مرضی کے بغیر دھرنے کی حمایت نہیں کر سکتا ڈی جی آئی ایس آئی ملوث ہے تو پھر آرمی چیف بھی ملوث ہو گا۔ اطہر عباس

نواز شریف خود بھی اصغر خان کیس میں ملوث ہیں۔ قمر زمان کائرہ

محمد زبیر کہتے ہیں جنرل پاشا ملوث تھے اسد عمر کہتے ہیں نہیں تھے یہ دنوں بھائی بیٹھ کر فیصلہ کر لیں کہ کون سچ بول رہا ہے۔ کائرہ

یہ کیسے ممکن ہے کہ ڈی جی آئی ایس آئی دھرنے کو سپورٹ کرے اورآرمی چیف کو اس کا علم ہی نہ ہو۔ اسد عمر

میں نہیں سمجھتا کہ جنرل کیانی یا جنرل راحیل پی ٹی آئی بنانے یا اس کی مدد کرنے میں ملوث ہیں۔ اطہر عباس

پہلی مرتبہ پاکستان کے آرمی چیف نے بھارت پر ہمارے ملک میں دہشت گردی میں ملوث ہونے کا الزام لگایا ہے۔ روحیل اصغر

پاکستان کی حکومت بھارت کے پاکستان میں دہشت گردی میں ملوث ہونے کا کیس اقوام متحدہ میں لے کر جا رہی ہے۔ روحیل اصغر

بھارت نے پوری دنیا میں یہ بات مشہور کی ہوئی ہے کہ پاکستان دہشت گردی کا مرکز ہے۔ اسد عمر

بھارت نہ صرف چائنا پاکستان اکنامک کاریڈور کی وجہ سے پریشان ہے بلکہ اس کے ملک کے اندر بھی بہت سے مسائل ہیں۔ کائرہ

ہمارے اختلافات اپنی جگہ لیکن بھارت کے مسئلے پر تمام سیاسی جماعتیں اکٹھی ہیں۔ اسد عمر

گورداس پور میں ابھی دہشت گردی کا واقع بھی نہیں ہوا تھا کہ پاکستان پر الزام لگا دیا گیا۔ کائرہ

طالبان سے مزاکرات میں اس وقت اگر کوئی لوزر ہے تو وہ بھارت نظر آ رہا ہے۔ اطہر عباس

بھارت کو پاکستان کا مشکور ہونا چاہئیے کہ اس نے القاعدہ کو محدود کر دیا ہے بلکہ ختم ہی کر دیا ہے۔ اطہر عباس

آرمی چیف نےصاف طور پر کہا تھا کہ اب پاکستان میں دہشت گردی اور فرقہ وارانہ تشدد کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ اطہر عباس

ملک اسحق کے مارے جانے کا واقع آرمی چیف کے اسی بیان کا عکاس ہے۔ اطہر عباس

کسی بھی ملک میں جمہوریت کے لئیے ایک مظبوط اپوزیشن کا ہونا بہت ضروری ہے۔ روحیل اصغر

یہ بات درست ہے کہ پی ٹی آئی کو پارلیمنٹ سے نہیں نکالا جانا چاہئیے کائرہ

مسلم لیگ ن اپنی دشمن خود ہے ایک مسئلہ ختم ہوتا ہے تو اپنے لئیے دوسرا خود پیدا کر لیتی ہے۔ کائرہ

اجمل قصاب بھارت کا بنایا ہوا ایک کردار تھا میرے خیال میں اس کا پاکستان سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ روحیل اصغر