16 July, 2015 21:08

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

16-JULY-201

بھارتی فوج کی یہ پالیسی لگتی ہے کہ وہ جب چاہیں گے سرحدوں پر ٹمپریچر بڑھا دیں گے۔ اطہر عباس کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

بھارتی فوج اور بی جے پی کا گٹھ جوڑ ہے جو پاکستان کو دہشت گردی کا مرکز کہتے ہیں۔ اطہر عباس

بھارتی فوج کی پالیسی ہے کہ پاکستان کی فوج کو سرحدوں پر مصروف رکھا جائے تا کہ وہ اپنے اندرونی معاملات پر توجہ نہ دے سکے۔ طلعت حسین

کہا جاتا ہے کہ تین جنگوں میں اتنے گولے نہیں پھینکے گئے جتنے بھارت نے پانچ چھ سال میں سرحدی خلاف ورزیوں کے دوران پھینکے ہیں۔ طلعت حسین

جب بھی پاکستان اور بھارت کے تعلقات بہتری کی طرف جانے لگتے ہیں تو کوئی نہ کوئی واقع ہو جاتا ہے۔ قمر زمان کائرہ

نواز شریف اور مودی ملاقات کے بعد مشرکہ اعلامیہ میں کشمیر کا لفظ استعمال نہ کرنے کی وجہ سے لوگوں نے کافی تنقید کی ہے۔ کائرہ

پاکستان کی کوئی حکومت کشمیر کے مسئلے کو ایک طرف رکھ کر بھارت کے ساتھ تعلقات استوار نہیں کر سکتی۔ کائرہ

انڈین آرمی بالکل نہیں چاہتی کہ کشمیر کے مسئلے کا کوئی سیاسی حل نکلے۔ اطہر عباس

بھارتی فوج نے اپنی حکموت کو سیاچن کے مسئلے کو بھی سیاسی طور پر حل کرنے کی اجازت نہیں دی اسے ویٹو کر دیا۔ اطہر عباس

بھارت کو اپنی بڑی معیشت فوج اور بڑے ملکوں سے شراکت کا زعم ہے۔ کائرہ

پاکستان کو چاہئیے کہ وہ بھارتی جارحیت کا مسئلہ عالمی فورم اور اقوام متحدہ میں اٹھائے۔ کائرہ

بھارتی میڈیا پاکستان کے خلاف اتنا پر اشتعال ہے کہ وہ اپنی حکومت کو کبھی پاکستان سے بہتر تعلقات قائم نہیں کرنے دے گا۔ اطہر عباس

بھارت عالمی طور پر پاکستان کو تنہا کرنے کی کوششیں کرتے کرتے خود تنہا ہو گیا ہے۔ اطہر عباس

بھارت سے بات چیت میں اگر کشمیر کے مسئلے کا زکر نہیں آئے گا تو تنقید ہو گی اور آپ کو اس کا سامنا کرنا پڑے گا۔اطہر عبس

مودی سے ملاقات میں وزیراعظم کی ٹیم نے کشمیر کا لفظ استعمال نہ کر کے ان کے لئیے بہت بڑی مشکل کھڑی کر دی ہے۔ کائرہ

ہم نے پاکستانی ہائی کمشنر کی دعوت میں اس لئیے شرکت نہیں کی کیونکہ نواز شریف مودی ملاقات کے بعد مشرکہ اعلامیہ میں کشمیر کا لفظ استعمال نہیں کیا گیا۔ سید علی گیلانی

میں اپنے گھر میں نظر بند ہوں اور مجھے اپنے گھر کی چار دیواری سے باہر جانے کی اجازت نہیں ہے۔ سید علی گیلانی

پاکستان ہمارا ملک ہے ہمیں اس سے بہت امیدیں وابستہ ہیں وہ کشمیر کا لفظ استعمال نہ کرے تو ہمارے زخموں پر نمک پاشی ہوتی ہے۔ سید علی گیلانی

ہماری حکومت نسبتاْ کمزور تھی لیکن پھر بھی گیلانی صاحب نے من موہن کے ساتھ ملاقات میں بھارت کی طرف سے بلوچستان میں دہشت گردی کا مسئلہ اٹھایا تھا۔ کائرہ

طاالبان کے ساتھ بات چیت کے عمل کو اس وقت امریکہ روس اور چین کی حمایت بھی حاصل ہے جو پہلے نہیں تھی جو یہ پاکستان کی بہت بڑی کامیابی ہے۔ کائرہ

الطاف حسین اگر اداروں کے خلاف گالی گلوچ کی زبان استعمال کریں گے تو یہ ناقابل قبول ہو گا۔ کائرہ

بلاول اور ڈی جی رینجرز کے درمیان ملاقات سے اختلافات ختم ہو جانا ایک بہت اچھی بات ہے۔ کائرہ

کرپشن کے خلاف تمام اداروں کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا اور وزیراعظم کو لیڈر شپ فراہم کرنی ہو گی۔ کائرہ