8 July, 2015 21:04

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

08-JULY-201

جب فورسز کو کوئی ہدف دیا جاتا ہے تو پھر اس کے نتائج کا انتظار کرنا پڑتا ہے۔ اطہر عباس کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

رینجرز کو کراچی میں رہنا چاہئیے اس نے سیاسی جماعتوں سے جرائم پیشہ لوگوں کو صاف کیا ہے۔ فردوس عاشق اعوان

کسی کو کچھ زاتی تحفظات ہو سکتے ہیں ورنہ پیپلز پارٹی رینجرز کے آپریشن کو سپورٹ کرتی ہے۔ فردوس عاشق اعوان

رینجرز قابل فخر ادارہ ہے لیکن اسے قانون اور آئین کے اندر رہتے ہوئے اقدامات کرنے چاہئییں۔ انبساط ملک

پیپلز پارٹی پر بدعنوانی، رشوت ستانی اور نا اہلی کے الزامات لگتے رہے لیکن انہوں نے خود کو درست نہیں کیا۔ اطہر عباس

ایم کیو ایم پر را سے تعلق، بھتہ خوری، پولیس والوں کو مارنے اور ٹارگٹ کلنگ کے الزامات ہیں۔ اطہر عباس

صرف پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم ہی نہیں کراچی میں اور بھی مزہبی اور سیاسی جماعتیں ملوث ہیں۔ فردوس عاشق اعوان

پیپلز پارٹی نے ہمیشہ انتہا پسندی اور دہشت گردی کو چیلنج کیا ہے اور قربانیاں دی ہیں۔ فردوس عاشق اعوان

رینجرز نے کراچی کی صورت حال کو کافی بہتر کیا ہے انہیں اس بات کا کریڈٹ دیا جانا چاہئیے۔ حافظ نعیم الرحمان

پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم پر ہاتھ ڈلا ہے تو وہ رینجرز کے خلاف رد عمل ظاہر کرنے لگ گئے ہیں۔ نعیم الرحمان

رینجرز انیس سو بانوے سے کراچی میں ہے اس وقت انہوں نے ایسے آپریشن کیوں نہیں کیا جیسے آج ہو رہا ہے۔ انبساط ملک

جب ایکسٹرا فورسز بلائی جاتی ہیں تو اس دوران پولیس اور انٹیلی جنس کی خرابیاں دور کر لی جاتی ہیں جو نہیں کی گئیں۔ اطہر عباس

اگر اب کراچی کے حالات کو درست نہ کیا گیا تو پھر لبنان کی طرح سول وار کی صورت حال پیدا ہو سکتی ہے۔ اطہر عباس

ایم کیو ایم کے پچیس ایم این ایز اور پچاس ایم پی ایز ہیں لیکن انہوں نے کراچی کے لئیے کچھ نہیں کیا۔ نعیم الرحمان

ڈاکٹر عمران فاروق کے قتل کا لندن میں موجود ایم کیو ایم کے کسی لیڈر پر کوئی الزام نہیں ہے۔ انبساط ملک

ڈاکٹر عمران فاروق کے قتل میں جو بھی ملوث ہے اسے سزا ملنی چاہئیے۔ انبشاط ملک

حکومت پاکستان کا زور اس بات پر ہے کہ برطانہ منی لانڈرنگ کا معاملہ صاف کرے کیونکہ اس میں را کا نام آتا ہے۔ اطہر عباس

برطانیہ ڈاکٹر عمران فاروق کے قتل کی تحقیقات پر زور دے رہا ہے کیونکہ منی لانڈرنگ کیس میں وہ خود بھی پھنستا ہے۔ اطہر عباس

وفاقی حکومت اداروں کے پیچھے چھپ رہی ہے اس میں فیصلے کرنے کی جرات نہیں ہے۔ فردوس عاشق اعوان