30 June, 2015 21:03

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

30-JUNE-201

لندن میٹرو پولیس نے آج کہہ دیا ہے کہ طارق میر سے منسوب بیان ان کے ریکارڈ کا حصہ نہیں ہے۔ واسع جلیل کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

اب دیکھنا یہ ہے کہ میڈیا میٹرو پولیس کے بیان کو کس طرح پیش کرتا ہے۔ واسع جلیل

ہم بھی چاہتے ہیں کہ ڈاکٹر عمران فاروق کے قاتل پکڑے جایں اور کیس اپنے انجام کو پہنچے۔ واسع جلیل

ہم نے کہا تھا کہ ایکسٹرا بیلٹ پیپرز ضرورت سے زیادہ چھپوائے گئے ہیں جاننے کے لئیے فارمز پندرہ ملنے چاہئییں۔ جہانگیر ترین

جیوڈیشل کمشن نے فارمز پندرہ کے لئیے تھیلے منگوائے تو ان میں بائیس ہزار فارمز پندرہ موجود ہی نہیں تھے۔ جہانگیر ترین

تھیلوں سے ملنے والے بہت سے فارمز پندرہ اور ان کی آر اوز سے ملنے والی کاپیاں آپس میں نہیں ملتیں۔جہانگیر ترین

ہمارا دعوی ہے کہ آر اوز نے الیکشن کے بعد اپنی کاپیاں تیار کیں۔ جہانگیر ترین

آر اوز سے ملنے والی فارمز پندرہ کی کاپیوں میں بہت سے ایسے خانے لکھے ہئوے ہیں جو تھیلوں سے ملنے والے فارمز میں خالی ہیں۔ جہانگیر ترین

عام حلقوں میں چار یا پانچ فیصد ایکسٹرا بیلٹ پیپرز چھپوائے گئے جبکہ این اے اکیس کیپٹن صفدر کے حلقے میں سولہ فیصد زیادہ چھپوائے گئے۔ جہانگیر ترین

پنجاب کے گیارہ حلوقں میں زیادہ بیلٹ پیپرز چھپوائے گئے ان میں سے گیارہ لاہور کے تھے۔ جہانگیر ترین

ہمار وکیلوں نے ہمیں بتایا ہے کہ ان کے پاس فارمز پندرہ اور ان کی کاپیوں کے فرق کا جواب موجود ہے۔ محمد زبیر

پی ٹی آئی کے وکیل نے جیوڈیشل کمشن میں کہا ہے کہ وہ الیکشن میں دھاندلی ثابت کرنے کے لئیے نہیں آئے۔ محمد زبیر

نجم سیٹھی کا بیان کہ الیکشن سے پہلے ان کے پاس اختیارات نہیں رہے تھے اتنا بڑا تھا کہ ہم نے پھر پینتیس پنکچر کا زکر کرنا مناسب نہیں سمجھا۔ جہانگیر ترین

لگتا ہے کہ عبوری حکومت کے علاوہ ایک شیڈو گورنمنٹ کام کر رہی تھی جو تمام معاملات کو کنٹرول کر رہی تھی۔ جہانگیر ترین

ہمارے ہاں بند کمروں میں فیصلے ہو جاتے ہیں جن کا کبھی کسی کو علم نہیں ہو پاتا۔ جہانگیر ترین