9 April, 2015 21:13

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

09-APRIL-2015

کراچی کی سیاست میں آج ایک اچھا دن تھا کوئی بڑا واقع نہیں ہوا اور برداشت کا مطاہرہ کیا گیا۔ قمر زمان کائرہ کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

عمران خان کو آج تلخ جملوں سے پرہیز کرنا چاہئیے تھا۔ کائرہ

ایم کیو ایم نے آج عمران خان کے دورہ کراچی کے دوران گزشتہ دنوں کی نسبت اپنا رویہ بہت اچھا رکھا۔ روحیل اصغر

ایم کیو ایم نے آج عمران خان کا کراچی میں استقبال کر کے اپنا ایک اچھا تاثر قائم کیا ہے۔ علی زیدی

دھکم پیل ہونے کے بعد عمران خان اس لئیے واپس چلے گئے کہ کہیں کوئی واقع ہو جانے سے بات بڑھ نہ جائے۔ علی زیدی

ایم کیو ایم کے کارکنوں نے مجھے اور اسد عمر کو گالیاں دیں اور ہماری گاڑی کو لاتوں سے مارا۔ علی زیدی

الطاف حسین نے عمران خان کو پیغام دیا تھا کہ آپ کراچی آیں خوش آمدید کہیں گے اور پھولوں کی پتیاں نچھاور کریں گے۔ بلوچ

عمران خان اور بھابھی کو کچھ لوگوں نے دھکے دئیے جو ہمارے لوگ نہیں تھے۔ بلوچ

وزیراعظم نے کہا ہے کہ یمن پر ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہوا فیصلہ پارلیمنٹ کرے گی۔ روحیل اصغر

میرے خیال میں یمن کی صورت حال پر پرسوں تمام سیاسی جماعتوں کے سربراہوں کا ایک اجلاس ہو گا۔ روحیل اصغر

پرلیمنٹ سب سے اوپر ہے یمن کےمسئلے پر وہاں وہاں بحث ہونی چاہئیے۔ کائرہ

پیپلز پارٹی اور دوسری سیاسی جماعتوں نے یمن کے مسئلے پر اپنی رائے تو دی ہے لیکن ان کے پاس مکمل معلومات نہیں ہیں کہ حکومت کیا کرنے جا رہی ہے۔ کائرہ

حوثی قبائل کے دوسری طرف القاعدہ بیٹھی ہے سعودی عرب کو سمجھداری سے کام لینا ہو گا۔ کائرہ

حوثی قبائل شیعہ نہیں ہیں وہ بریلویوں کے زیادہ قریب ہیں۔ علی زیدی

پاکستان کو یمن فوج نہیں بھیجنی چاہئیے بلکہ ثالثی کا کردار ادا کرنا چاہئیے۔ بلوچ

جنگ یمن میں ہو رہی ہے سعودی عرب میں نہیں ہمیں فوجیں بھیجنے کی ضرورت نہیں ہے۔ بلوچ

یمن میں حقوق اور آئین کے لئیے لڑائی ہو رہی ہے۔ کائرہ

وزیراعظم نے کہا کہ یمن کے مسئلے پر ایران کو ہوش سے کام لینا چاہئیے تو کیا وہ سعودی عرب کی حمایت کر رہے تھے۔ کائرہ

سیاست میں تاثر بہت اہم ہوتا ہے اور نواز شریف سے سعودی عرب کا حمایتی ہونے کا تاثر مل رہا ہے۔ علی زیدی

یمن میں خانہ جنگی ہو رہی ہے سعودی عرب میں مقامات مقدسہ پر حملہ نہیں ہوا ہے۔ بلوچ

ہاؤس آف سعود اور ہاؤس آف شریف میں تعاون کا تاثر پاکستان کے لئیے بہت خطرناک ہے۔ کائرہ

یمن کا مسئلہ فرقہ بندی کا نہیں ہے لیکن غیر مسلم دنیا اسے شیعہ سنی مسئلے کے طور پر اچھال رہی ہے۔ کائرہ