29 October, 2014 21:27

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

29-OCT-2014

سپیکر نے ہمیں استعفوں کی تصدیق کے لئیے بلایا آئین کے مطابق ضروری نہیں لیکن ہم ان کے احرام میں چلے گئے۔ شاہ محمود قریشی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

ہم سپیکر صاحب سے ملنے کے لئیے گئے انہوں نے ہمیں ڈھائی گھنٹے انتظار کروایا۔ شاہ محمود

پی ٹی آئی کے تمام ارکان نےا پنے استعفے اپنے ہاتھ سے لکھ کر پیش کئیے۔ شاہ محمود

ہمارے تین ارکان ایسے ہیں جن کے بارے میں واضع نہیں ہے کہ وہ استعفی دیں گے یا نہیں۔ شاہ محمود

ہماری ایک خاتون رکن کو حکومت نے استعفی نہ دینے کی صورت میں باقاعدہ پیشکش کی۔ شاہ محمود

پارلیمنٹ کی کوئی حیثیت نہیں ہے تمام فیصلے باہر ہوتے ہیں وزیراعظم وہاں جاتے نہیں ہیں۔ شاہ محمود

حکومت جیوڈیشل کمشن بنا دے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔ شاہ محمود

وزیراعظم کے استعفے کے علاوہ تمام معاملات طے ہو چکے تھے پھر حکومت بات چیت سے کیوں بھاگ گئی۔ شاہ محمود

دو ماہ سے زیادہ ہو چکے ہیں ہم دھرنے میں کسی مقصد کے لئیے بیٹھے ہیں۔ شاہ محمود

حکومت پی ٹی آئی کے استعفوں پر کنفیوژن کا شکار ہے۔ شاہ محمود

ہم حکومت سے مزاکرات کے لئیے تیار ہیں اس کے علاوہ اور کوئی راستہ نہیں ہے۔ شاہ محمود

مسلم لیگ ن میں دراڑیں پڑ چکی ہیں اس کے ارکان اپنے حلقوں میں جاتے ہیں تو گو نواز گو کے نعرے لگتے ہیں۔ شاہ محمود

عمران خان کے دھرنے نے کیا کام کر دکھایا ہے ملتان کے ضمنی الیکشن کا رزلٹ اس کا ثبوت ہے۔ شاہ محمود

ہم عوامی رابطے کی مہم پر ہیں ہمارے کامیاب جلسے اس کی گواہی ہیں۔ شاہ محمود

تیس نومبر کو اسلام آباد میں ایک عجیب منظر ہو گا سارا ملک یہاں اکٹھا ہو گا۔ شاہ محمود

پی ٹی آئی کے دھرنے نے اسلام آباد کا کلچر تبدیل کر کے رکھ دیا ہے۔ شاہ محمود

تیس اکتوبر سے ہم روزانہ الیکشن کمشن کے سامنے احتجاج کیا کریں گے۔ شاہ محمود

ہم ایک سال تک پارلیمنٹ میں دھاندلی کے خلاف بولتے رہے لیکن ہماری کسی نے نہیں سنی۔ شاہ محمود

قوم مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی سے تھک چکی ہے اٹھارہ اکتوبر کا کراچی کا جسلہ اس کی آنکھیں کھولنے کے لئیے کافی ہے۔ شاہ محمود

آج تک مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے اپنے پارٹی الیکشن نہیں کروائے اور بات جمہوریت کی کرتے ہیں۔ شاہ محمود

ہم طاہر القادری کے ساتھ وزیراعظم ہاؤس کی طرف اس لئیے بڑھے تا کہ کوئی خون خرابہ نہ ہو۔ شاہ محمود

پی ٹی وی پر قبضہ کرنے والوں میں پی ٹی آئی کا کوئی کارکن شامل نہیں تھا۔ شاہ محمود

رحیق عباسی نے وزیراعظم ہاؤس کی طرف نہ بڑھنے کی صورت مین پی ٹی آئی کو دھرنا ختم کرنے کی دھمکی نہیں دی تھی۔ شاہ محمود

طاہرالقادری نے اس لئیے دھرنا ختم کیا کیونکہ ان کے پاس اب کہنے کو کچھ باقی نہیں بچا تھا۔ شاہ محمود

مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے لوگ ہمارے ساتھ رابطے کر رہے ہیں۔ شاہ محمود

ہم جلد الیکشن چاہتے ہیں کیونکہ ہم موجودہ حکومت کے مینڈیٹ کو درست تسلیم نہیں کرتے۔ شاہ محمود

انشا اللہ مجھے دو ہزار پندرہ میں الیکشن دکھائی دے رہے ہیں۔ شاہ محمود