26 May, 2014 21:55

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

26-MAY-2014

مسلم لیگ ن اور بی جے پی کی پچھلی حکومتوں میں پاکستان اور بھارت اتنے قریب آ گئے تھے کہ جتنے پہلے کبھی نہیں۔ شاہد خاقان عباسی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو.

نواز شریف اور واجپائی کی ملاقات سے کشمیر کا مسئلہ حل ہونے کی امید پیدا ہو گئی تھی۔ شاہد خاقان عباسی

نواز شریف کا بھارت جانا اچھا اقدام ہے اللہ کرے دونوں ملکوں کے حالات اچھے ہو جایں۔ مولا بخش چانڈیو

ہم بھارت کے ساتھ امن چاہتے ہیں امید ہے نواز شریف اور مودی کی ملاقات سے تعلقات بہتر ہو جایں گے۔ مولا بخش چانڈیو

نواز شریف نے اچھا کیا کہ بھارت گئے لیکن ان کے دورے سے کوئی بڑی کامیابی نہیں ملے گی۔ شفقت محمود

جب تک کشمیر تک بنیادی مسائل حل نہیں ہوں گے دونوں ملکوں کے حالات ٹھیک نہیں ہو سکتے۔ شفقت محمود

نواز شریف مودی کی دعوت پر بھارت چلے گئے ہیں اب تعلقات ٹھیک کرنے کی زمہ داری بھارت پر ہو گی۔ شفقت محمود

نواز شریف کے بھارت جانے پر فوج کی کیا رائے ہے اس بات کو بڑا مسئلہ نہیں بنانا چاہئیے۔ شفقت محمود

بھٹو اور اندرا گاندھی کے درمیان شملہ معاہدہ دونوں ملکوں کے تعلقات میں سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔ مولا بخش چانڈیو

بھٹو کے اچھے اقدامات کو بھی اسٹیبلشمنٹ نے غلط انداز میں پیش کیا تھا۔ مولا بخش چانڈیو

بعد میں جنرل ضیا۶ الحق نے بھارت کے ساتھ کرکٹ ڈپلومیسی کی اور مشرف نے خود اٹھ کر بھارتی وزیراعظم سے ہاتھ ملایا۔ مولا بخش چانڈیو

حکومت کو بھارت سے تعلقات کے معاملہ۰ میں تمام اداروں کو بٹھا کر اعتماد میں لینا چاہئیے۔ شفقت محمود

بھارت خود کو سپر پاور سمجھتا ہے اور باہمی تعلقات میں دھونس جمانے کی کوشش کرتا ہے۔ شفقت محمود

بھارت نے مشرقی پاکستان پر حملہ کیا اور سیاچن پر قبضہ کر لیا۔ شفقت محمود

بھارت میں میڈیا ہر وقت پاکستان کے خلاف نفرت کا اظہار کرتا رہتا ہے جس سے وہاں کی حکومت متاثر ہوتی ہے۔ شفقت محمود

ایران اور افغانستان کے ساتھ ہمارے تعلقات ٹھیک ہو رہے ہیں اور چین سے ہمارے بہت اچھے تعلقات ہیں۔ شفقت محمود

بھارت سے تعلقات کے لئیے ہماری پالیسیاں پارلیمنٹ اور اداروں کی تسلیم شدہ ہونی چاہییں۔ شاہد خاقان عباسی

نواز شریف اگر کھل کر اور پاکستان کا وزیراعظم بن کر بات کریں گے تو بھارت کے ساتھ مسائل حل ہو جایں گے۔ مولا بخش چانڈیو

نواز شریف پارلیمنٹ اور اداروں کو بھارت سے تعلقات پر آگاہ رکھیں گے تو وہ انہیں اور بھی طاقت فراہم کریں گے۔ مولا بخش چانڈیو

نواز شریف کا سارا زور اپنے خاندان اور برادری کے لوگوں کے حکومتی عہدے دینے پر صرف ہو رہا ہے۔ شفقت محمود

نواز شریف اب اپنا شہنشاہیت کا نظام پارٹی کے علاوہ ملک میں بھی لے آئے ہپں۔ شفقت محمود

وزیراعظم کا پورا خاندان پبلک پراپرٹی ہوتا ہے اس پر اعتراضات بھی آتے ہیں۔ شاہد خاقان عباسی